Showbiz

‘ہم’ ایوارڈ کے لیے کینیڈا جانے والے فن کاروں پر تنقید کیوں ہو رہی ہے؟

Written by Omair Alavi

کراچی — 

پاکستان میں ٹی وی نیٹ ورک ‘ہم’ کے کینیڈا میں ہونے والے ایوارڈ شوز کا معاملہ موضوع بحث ہے۔ بعض حلقوں کی جانب سے ملک میں سیلاب کے باعث آنے والی تباہی کے دوران ایوارڈ شو کے انعقاد پر تنقید کی جا رہی ہے تو وہیں ‘ہم’ انتظامیہ کا کہنا ہے کہ ایوارڈ شو کے ذریعے ہونے والی آمدنی کا بڑا حصہ سیلاب متاثرین کو دیا جائے گا۔

ہالی وڈ اداکارہ اینجلینا جولی اور مشہور ترک ٹی وی سیریل ارطغرل غازی میں کام کرنے والے ادکار جلال ایل کو سیلاب سے متاثرہ علاقوں کے دوروں پر سراہا جا رہا ہے ۔ دوسری جانب بعض صارفین پاکستانی فن کاروں کی کینیڈا میں ڈانس ریہرسل کی ویڈیوز اور تصاویر پر سوشل میڈیا پر اُنہیں تنقید کا نشانہ بنا رہے ہیں۔

ایک ایسے موقع پر جب پاکستان کا ایک تہائی حصہ پانی میں ڈوبا ہوا ہے اور دنیا بھر سے لوگ یہاں آکر اپنے اپنے طور پر مدد کررہے ہیں، چند پاکستانی فن کار بھی سیلاب زدگان کی مدد میں پیش پیش ہیں۔

انہی افراد میں گلوکارہ و اداکارہ حدیقہ کیانی کا نام قابلِ ذکر ہے جنہوں نے ان علاقوں کا دورہ کیا جہاں سیلاب کی تباہ کاریاں زیادہ تھیں۔

کینیڈا جانے والے فن کاروں کو تنقید کا سامنا

حدیقہ کیانی کے علاوہ سیلاب زدگان کی مدد کے لیے آگے آنے والے پاکستانی فن کاروں کی تعداد کم ہے جس کی وجہ کینیڈا کے شہر ٹورنٹو میں 24 ستمبر کو ہونے والے ہم ایوارڈ کی تقریب ہے۔ پاکستان کی شوبز انڈسٹری کے تمام بڑے ستارے ان دنوں ٹورنٹو میں ہیں۔

معروف سیاست دان اور پاکستان پیپلز پارٹی کی رہنما شرمیلا فاروقی نے ایک ایسے وقت میں ہم ایوارڈز کے انعقاد پر تنقید کی جب پاکستان میں لوگ بے سروسامانی کی حالت میں زندگی بسر کررہے ہیں۔

اپنی سوشل میڈیا پوسٹ میں ان کا کہنا تھا کہ ایک ایسے وقت میں جب ہالی وڈ اداکارہ اینجلینا جولی امریکہ سے پاکستان آکران علاقوں کا دورہ کرسکتی ہیں جہاں سیلاب سے تباہی ہوئی تو پاکستانی اداکاروں کا ٹورنٹو میں ناچ گانے میں مصروف ہونا درست نہیں۔

انہوں نے حدیقہ کیانی کی مثال دیتے ہوئے ان کی تعریف کی اور کہا کہ یہ وقت پاکستان کے ان عوام کا درد بانٹنے کا ہے جن کا سب کچھ سیلاب میں بہہ گیا، نہ کہ غیر ملک میں جاکر ایوارڈ شو کرنے کا۔

ہم ایوارڈز میں شرکت کے لیے پاکستان کے تمام ہی بڑے اداکار ٹورنٹو گئے ہوئے ہیں۔لیکن ان افراد میں اداکار اظفر رحمان کا نام شامل نہیں جنہوں نے بہترین ولن کی کیٹگری میں نامزد ہونے کے باوجود کینیڈا جانے سے معذرت کر لی اور انتظامیہ سے درخواست کی کہ ان کا ٹکٹ سیلاب زدگان کے فنڈ میں عطیہ کردیا جائے۔

سوشل میڈیا پوسٹ میں اظفر رحمان کا کہنا تھا کہ وہ کینیڈا میں موجود اپنے مداحوں سے معذرت خواہ ہیں جو ان کا انتظار کررہے تھے۔کیوں کہ ایک ایسے موقع پر جب پورا ملک تباہی سے دو چار ہے، ان کا ضمیر انہیں ہم ایوارڈز میں شرکت کی اجازت نہیں دیتا۔

اس احتجاج میں صرف اظفر رحمان ہی شامل نہیں، اداکارہ مریم سلیم نواز بھی اس سے زیادہ خوش نہیں۔ مہرین جبار کی ویب سیریز ‘ایک جھوٹی لو اسٹوری’ میں ایک سوشل ورکر کا کردار ادا کرنے والی اداکارہ نے اپنی انسٹا اسٹوری میں ہم ٹی وی کی انتظامیہ کو آڑے ہاتھوں لیا۔

مریم سلیم نواز کا کہنا تھا کہ اگر اس سال ہم ٹی وی ایوارڈز اتنے ہی ضروری تھے تو وہ ایک بڑی تقریب کی جگہ ایک ورچوئل (آن لائن) تقریب منعقد کرسکتے تھے جس سے بچ جانے والے پیسوں کو سیلاب زدگان کی مدد کے لیے استعمال کیا جاسکتا تھا۔

ٹوئٹر صارفین بھی اس احتجاج میں اداکاروں اور سیاست دانوں سے پیچھے نہیں تھے۔

ڈاکٹر شیریں بنگش نامی صارف نے ہم ٹی وی کی مینجمنٹ پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ دنیا بھر سے پاکستان امداد مانگ رہا ہے اور ہم ٹی وی کینیڈا میں ہم ایوارڈز کرانے میں مصروف ہے۔


ایک اور صارف ثنا اعجاز کےبقول مفتی مینک پاکستان میں ہیں، اینجلینا جولی پاکستان میں ہیں۔ لیکن ہمارے شوبز اسٹارز ٹور نٹو میں کیوں کہ وہاں ایک ایوارڈ تقریب ہورہی ہے۔

ہم ایوارڈز سے حاصل ہونے والے ریوینیو کا ایک بڑا حصہ سیلاب زدگان کو دیا جائے گا، ہم ٹی وی انتظامیہ

سوشل میڈیا پر اگر ہم ٹی وی کی انتظامیہ کو تنقید کا نشانہ بنایا جارہا ہے تو دوسری جانب ہم ٹی وی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ انہیں ملک میں ہونے والی تباہ کاریوں کا احساس ہے۔ اسی لیے انہوں نے پہلے ہی اعلان کردیا تھا کہ ہم ٹی وی،اپنے اس ایوارڈ شو سے سیلاب متاثرین کے لیے فنڈ اکٹھا کرنے کی کوشش کرے گا۔

بیان میں ہم ٹی وی انتظامیہ کا مؤقف تھا کہ ایوارڈ شو سے حاصل ہونے والے ریوینیو کابڑا حصہ تو وہ عطیہ کریں گے ہی بلکہ ایوارڈ شو سے قبل ایک فنڈ ریزنگ گالا کا بھی انعقاد کیا جائے گا ۔

ہم ٹی وی کا یہ گالا فنڈ ریزر ایونٹ جمعرات کو ٹورنٹو میں منعقد ہوا جس میں اداکارہ ماہرہ خان، بلال اشرف، اقرا عزیز اور اشنیٰ شاہ سمیت کئی فن کاروں نے شرکت کی۔ سوشل میڈیا پر اس ایونٹ کے حوالے سے بات کرتے ہوئے بلال اشرف نے اسے ایک اچھا قدم قرار دیا۔

ایوارڈ شو میں شرکت کے لیے جانے سے پہلے گلوکار و اداکار ہارون شاہد نے گزشتہ رات سوشل میڈیا کا سہارا لیتے ہوئے بتایا کہ ایسےموقع پر ایوارڈ تقریب کے انعقاد پر ان کے دل میں بھی شکوک و شبہات تھے۔لیکن اپنے ساتھی اداکاروں سے بات کرکے انہیں اندازہ ہوا کہ اس تقریب سےسیلاب زدگان کی مدد ہو گی اور اسی وجہ سے انہوں نے کینیڈا جانے کی ہامی بھری۔

Omair Alavi – BOL News

About the author

Omair Alavi